شعوری ارتقاء کا اگلا مرحلہ

August 1, 2014 at 06:23 , , ,

مبارک حیدر


انسانی تاریخ کا کوئی بھی سماجی مرحلہ مکمل طور پر اچھا یا برا نہ تھا۔ انسان ہمیشہ فطرت کی چیرہ دستیوں اورخرابیوں کے خلاف لڑتا رہا ہے۔ ہر مرحلہ ارتقا کا ایک درجہ تھا۔

ابتدائی انسانی گروہوں کے ہاں ذاتی ملکیت کا نہ ہونا کوئی رومان پرور کہانی نہیں۔ قدیم انسان اپنے حیوانی ماضی کے بہت قریب تھا۔ انسانوں کے گروہ خوراک کی تلاش میں دوسرے حیوانوں کی طرح گھومتے تھے۔ ہم آج بھی دیکھتے ہیں کہ اگر سبزہ عام اور وافر ہو تو چوپایوں کے ریوڑ خوراک پر قبضہ نہیں کرتے۔ اگر خوراک وافر ملتی ہو تو درندوں کے گروہ ذاتی ملکیت کے لئے نہیں لڑتے۔ قدیم انسانوں کے ہاں ذاتی ملکیت نہیں تھی اسلئے کہ انھیں نہ تو اس کی ضرورت تھی نہ وہ رزق کو ذخیرہ کرنے یا قبضہ میں رکھنے کا کوئی طریقہ جانتے تھے۔ ملکیت کا تصور آبادی اور عقل کے بڑھنے سے پیدا ہوا۔ آج اگر فضا کی آکسیجن سب کے لئے مفت ہے تو یہ اس لئے ہے کیونکہ کسی کے پاس اسے پکڑنے اور ذخیرہ کرنے کی صلاحیت نہیں۔

لہٰذہ آج کے انسان کو جمہوری سماج کے ساتھ ساتھ جن دو صلاحیتوں کی ضرورت ہے وہ ہیں ؛
(١) اتنا پیدا کرنے کی صلاحیت کہ جسے ہم ذخیرہ نہ کر سکیں
(٢) شمولیت کا مضبوط فکری کلچر
جب تک انسانی افکار پسماندہ اور تخلیقی صلاحیت محدود ہے ، تب تک ذاتی ملکیت کا خاتمہ نہ صرف ناممکن ہے بلکہ یہ مسائل کا حل بھی نہیں۔ جب تک سب کو تحفظ کا احساس نہ ہو اور انسانی شعور کے وسائل شمولیت کے لئے آمادہ نہ ہوں ، دیرپا امن کا حصول ممکن نہیں۔ گرچہ یہ ایسے نصب العین ہیں جن کا حصول آسان نہیں تاہم یہی انسان کے دیرینہ خواب ہیں جن سے ہم کبھی دستبردار نہیں ہونگے۔

ایک انسان دوست سماج کا وجود صرف سائنس اور ذہانت کی ترقی سے ہی ممکن ہے۔ تصادم اور طبقاتی جنگوں کا پرچار کرنے کی بجائے ہمیں اپنے معاشروں میں سائنس اور ذہن کی نشوونما کا مطالبہ تیز کرنا چاہئے۔

دنیا میں اس وقت کتنے ہی روشن خیال اہل ہنر، سائنسدان اور مفکّر ایسے ہیں جو سائنس کو کارپوریٹ طبقہ کی حرص سے آزاد کرانے کے لئے رابطوں میں ہیں۔ دوسری طرف جمہوریت کا نظم عام آدمی کی قوت بڑھا رہا ہے۔ عوام اپنی حکومتوں پر دباؤ بڑھا رہے ہیں کہ ان کے ٹیکسوں سے جمع ہونے والی دولت کو اجتماعی انسانی خوش حالی کے لئے استعمال کیا جائے۔ اسی صدی کے عرصہ میں ایک نئی انسان نواز سائنس کا ظہور اٹل دکھائی دیتا ہے۔

Related Posts

Comments

comments

Leave a reply

required

required

optional



two + 6 =

%d bloggers like this: